الٰہی بخش پنساری:اب وہ طوفاں ہے نہ وہ شور ہواؤں جیسا

رخشِ حیات ازل سے پیہم رواں دواں ہے۔تقدیر کی منشا کے مطابق مظاہرِ فطرت جس انداز میں آج مرکزِ نگاہ بن رہے ہیں کل سیلِ زمان کے مہیب تھپیڑوں کی زد میں آنے کے بعد ان کی ہئیت بدل جائے گی اور کایا پلٹ جائے گی۔ اس عالمِ آب و گِل کے تمام مناظر اور مزید پڑھیں

یونہی تنہا تنہا نہ خاک اُڑا، مری جان میرے قریب آ

یونہی تنہا تنہا نہ خاک اُڑا، مری جان میرے قریب آ میں بھی خستہ دل ہوں تری طرح مری مان میرے قریب آ میں سمندروں کی ہوا نہیں کہ تجھے دکھائی نہ دے سکوں کوئی بھولا بسرا خیال ہوں نہ گمان میرے قریب آ نہ چھپا کہ زخم وفا ہے کیا، تری آرزؤں کی کتھا مزید پڑھیں

بھیگے کاغذ میں لپٹے ہوئے لمحات—-سلمیٰ صنم (ریاست نامہ افسانوی مقابلہ)

اپنے ہونے کا احساس بہت حسین ہوتا ہے.میں اکثر اسے اپنے اندر محسوس کرتا ہوں.خود کو دیکھتا ہوں.سنتا ہوں.سوچتا ہوں اور بے اختیار میرا دل چاہتا ہے کہ چلاؤں میں ہوں ہاں ابھی میں ہوں اورابھی جب یہ احساس اپنے اندر لئے میں Regent Street پر واقع اپنی ملبوسات کی دکان سے نکلا اور Piccadely مزید پڑھیں

اُلو کا پٹھا

قاسم صبح سات بجے لحاف سے باہر نکلا اور غسل خانے کی طرح چلا۔ راستے میں، یہ اسکو ٹھیک طور پر معلوم نہیں، سونے والے کمرے میں، صحن میں یا غسل خانے کے اندر اس کے دل میں یہ خواہش پیدا ہوئی کہ وہ کسی کو اُلو کا پٹھا کہے۔ بس صرف ایک بار غصے مزید پڑھیں

ابجی ڈُ ڈُو

’ مجھے مت ستائیے۔۔۔۔۔۔ خدا کی قسم، میں آپ سے کہتی ہوں، مجھے مت ستائیے‘‘ ’’تم بہت ظلم کررہی ہو آج کل!‘‘ ’’ جی ہاں بہت ظلم کررہی ہوں‘‘ ’’یہ تو کوئی جواب نہیں‘‘ ’’میری طرف سے صاف جواب ہے اور یہ میں آپ سے کئی دفعہ کہہ چکی ہوں‘‘ ’’ آج میں کچھ نہیں مزید پڑھیں

اب اور کہنے کی ضرورت نہیں

یہ دنیا بھی عجیب و غریب ہے خاص کر آج کا زمانہ قانون کو جس طرح فریب دیا جاتا ہے ٗ اس کے متعلق شاید آپ کو زیادہ علم نہ ہو۔ آج کل قانون ایک بے معنی چیز بن کر رہ گیا ہے ۔ ادھر کوئی نیا قانون بنتا ہے ٗ اُدھر یار لوگ اس مزید پڑھیں

روغنی پتلے

ممتاز مفتی شہر کا الیٹ شاپنگ سنٹر…. جس کی دیواریں ، شلف، الماریاں بلور کی بنی ہوئی ہیں ۔ جس کا بنا سجا فیکیڈ جلتے بجھتے رنگ دار سائز سے مزین ہے۔ جس کے کاؤنٹرز مختلف رنگوں کے گلو کلرز پینٹس کی دھاریوں سے سجے ہوئے ہیں اور شلف دیدہ زیب سامان سے لدے ہیں مزید پڑھیں

گُڈی

دانش شفیق

خواہش کی سترنگی مورتی کی پوجا میں مگن انسان چڑھاوے چڑھاتا ادھ موا ہو چلا، نجانے کون کون سے پاٹ پڑھ چکا، پر یہ دیوی ہے کہ اس کی تشنگی مٹنے کا نام ہی نہیں لیتی۔ عنابی رنگ کا بھاری اور قیمتی عروسی لہنگا زیب تن کیئے، چمچماتے ہوئے زیورات پہنے، روپہلی پائل کی کھنک مزید پڑھیں