جونز کی تباہ کن باؤلنگ، جنوبی افریقہ مشکل میں

پہلا میچ کھیلنے والے رولینڈ جونز کی تباہ کن باؤلنگ اور بین اسٹوکس کی سنچری کی بدولت انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کے خلاف تیسرے ٹیسٹ میچ میں پوزیشن مضبوط کر لی ہے۔

اوول میں کھیلے جا رہے میچ کے دوسرے دن انگلینڈ نے 171 رنز چار کھلاڑی آؤٹ سے اپنی نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی تو اسے بین اسٹوکس اور ایلسٹر کک وکٹ پر موجود تھے۔

دن کے آغاز میں ہی انگلینڈ کو اس وقت کامیابی ملی جب 183 کے اسکور پر سابق کپتان کک 88 رنز بنانے کے بعد ایل بی ڈبلیو قرار پائے۔

اس کے بعد بیئراسٹو آل راؤنڈر بین اسٹوکس کا ساتھ نبھانے وکٹ پر آئے اور چھٹی وکٹ کیلئے 75 رنز جوڑ کر اپنی ٹیم کی پوزیشن کو مستحکم کر دیا، بیئراسٹو وکٹ پر بالکل سیٹ نظر آ رہے تھے لیکن 36 رنز کی اننگز کھیلنے کے بعد وہ پویلین لوٹ گئے۔

مزید پڑھیں  پیسے سے سب کچھ نہیں خریدا جاسکتا -عرب میڈیا نے بھارت کا بھانڈہ پھوڑ دیا

معین علی کا وکٹ پر قیام مختصر رہا اور وہ 16 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے جبکہ رولینڈ جونز نے ڈیبیو اننگز میں 25 رنز اپنے نام کیے۔

بین اسٹوکس نے عمدہ بیٹنگ جاری رکھتے ہوئے شاندار سنچری اسکور کی اور وہ 112 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہونے والے آخری بلے باز تھے جس کے ساتھ ہی انگلش اننگز 353 رنز پر تمام ہوئی۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے مورنے مورکل اور کگیسو ربادا نے تین، تین جبکہ ورنن فلینڈر نے دو وکٹیں حاصل کیں۔

جواب میں جنوبی افریقہ کی پہلی اننگز کا آغاز تباہ کن تھا اور تباہی کے ذمے دار کوئی اور نہیں بلکہ پہلا میچ کھیلے والے رولینڈ جونز تھے۔

Amla wicket – c Bairstow b Roland-Jones

Oh my word! Toby Roland-Jones has 3/8 – this time he gets Amla! Follow live: https://www.ecb.co.uk/matches/4320

Posted by England Cricket on Friday, July 28, 2017

جنوبی افریقی اوپنرز نے انگلش باؤلرز کے ابتدائی اوورز بغیر کسی نقصان کے گزار یے جس کے بعد جو روٹ نئے باؤلر رولینڈ کو باؤلنگ کیلئے لے کر آئے جنہوں نے اپنا انتخاب درست چابت کرتے ہوئے دوسرے ہی اوول میں ڈین ایلگر کو وکٹ کیپر کے ہاتھوں کیچ کرا دیا، بلے باز نے ریویو کا استعمال کیا لیکن یہ بھی انہوں نے بچانے کیلئے ناکافی ثابت ہوا۔

مزید پڑھیں  صدر ٹرمپ کو سفری پابندی پر پھر عدالتی شکست، صدارتی حکم کی معطلی کا فیصلہ برقرار

نووارد باؤلرز نے اسی پر بس نہ کیا بلکہ ہینو کہون، ہاشم آملا اور پھر کوئنٹن ڈی کوک کو یکے بعد دیگرے پویلین رخصت کر کے جنوبی افریقی بیٹنگ کی کمر توڑ دی۔

دوسرے اینڈ سے روٹ اپنے سب سے تجربہ کار باؤلر اور انگلینڈ کی جانب سے سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے جیمز اینڈرسن کو باؤلنگ کیلئے لائے جنہوں نے فاف ڈیو پلیسی اور کرس مورس کو رخصت کر کے انگلینڈ کو چھٹی کامیابی دلائی۔

مزید پڑھیں  مسلمان شخص سے دوستی،اسرائیلی لڑکی 'غیرت کے نام' پر قتل

جب بین اسٹوکس نے کیشپ مہاراج کو آؤٹ کیا تو مہمان ٹیم 61 رنز پر سات وکٹیں گنوا کر شدید مشکلات سے دوچار تھی۔

Rabada wicket – b Broad

Yes Broady! Unplayable for any batsman 💪Match centre: https://www.ecb.co.uk/matches/4320

Posted by England Cricket on Friday, July 28, 2017

اس موقع پر ٹیمبا باووما کا ساتھ نبھانے کگیسو ربادا آئے اور دونوں نے ٹیم کی سنچری مکمل کراتے ہوئے 53 رنز کی شراکت قائم کی لیکن دن کے اختتام سے قبل اسٹورٹ براڈ نے ربادا کی وکٹیں بکھیر کر جنوبی افریقہ کو آٹھواں نقصان پہنچایا، انہوں نے 30 رنز بنائے۔

جب دوسرے دن کا کھیل ختم ہوا تو جنوبی افریقہ نے آٹھ وکٹ کے نقصان پر 126 رنز بنائے تھے اور اسے فالو آن سے بچنے کیلئے مزید 28 رنز درکار ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں